کیا 29 اپریل 2020ء کو زمین سے ایک پتھر ٹکرانے والا ہے، جس وجہ سے دُنیا کا خاتمہ ہوجائے گا؟

آپ نے یقیناً سُنا ہوگا کہ 29 اپریل 2020ء کو زمین سے ایک پتھر ٹکرانے والا ہے، جس وجہ سے دُنیا کا خاتمہ ہوجائے گا… حقیقت یہ ہے کہ 29 اپریل کو زمین کے مدار سے ایک پتھر گزرے گا، مگر وہ زمین سے 60 لاکھ کلومیٹر دُور ہوگا، جس وجہ سے ہم محفوظ رہیں گے… لیکن ماضی میں زمین پر ایسے دیوہیکل پتھر بارہا ٹکرائے ہیں اور آخری بار ایسا واقعہ ساڑھے 6 کروڑ سال قبل ہوا تھا… جب آسمانِ دُنیا سے ایک ایسا ہی پتھر آفت بن کر نازل ہوا، جس نے سیارہ زمین پر زندگی کا تقریباً خاتمہ کردیا تھا، اس واقعے کے زخم آج بھی زمین کے سینے پر نقش ہیں… یہ ایسا اندونہاک واقعہ تھا، جس کی سنگینی سمجھنے کے لیے ہمیں ساڑھے چھ کروڑ سال ماضی کا دریچہ کھٹکھٹانا پڑے گا اور تصور کرنا پڑے گا جیسے ہم وہاں موجود ہوں… ہم دل تھام کر ساڑھے 6 کروڑ سال ماضی کی دہلیز کراس کرتے ہوئے اُس عہد میں داخل ہوچکے ہیں، جسے Mesozoic Era کہا جاتا ہے، یہ Mesozoic Era کا آخری دن ہے، ہم اپنے آس پاس ڈائناسارس سمیت دیگر جانوروں کو چلتا پھرتا دیکھ رہے ہیں… سب کچھ انتہائی پُرسکون انداز میں چل رہا تھا، لیکن پھر اچانک سے آسمان پر ایک ستارہ نمودار ہوا، جو دن کی روشنی میں بھی سورج سے کئی گُنا تیز چمک رہا تھا… یہ عجیب و غریب ستارہ کچھ لمحے بعد زمین کی جانب بڑھتا دکھائی دینے لگا… اُس لمحے روئے زمین پر کسی مخلوق کو علم نہیں تھا کہ یہ چمکتا ستارہ دراصل زمین سے زندگی کی رنگینیاں چھیننے آرہا ہے… یہ 12 کلومیٹر وسیع ایک پتھر تھا جو تقریباً ایک لاکھ کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے زمین کی جانب بڑھے جا رہا تھا… آج تحقیقات بتاتی ہیں کہ یہ پتھر شمالی امریکہ میں ایک سمندری مقام پر گِرا، جہاں آجکل میکسیکو کا چکشلب (Chicxulub) نامی گاؤں آباد ہے… ایٹم بم سے ایک ارب گنا زیادہ شدت کے اِس ٹکراؤ نے زمین پہ زندگی کے مستقبل کی سمت ہی بدل کے رکھ دی… اس کے ٹکرانے سے اتنی شدید شاک ویو اور گرمائش پیدا ہوئی کہ اگلے ہی سیکنڈز میں آس پاس کے سینکڑوں کلومیٹر تک کے علاقے میں ہر شے راکھ کا ڈھیر بن گئی…. اس ٹکراؤ سے اٹھنے والے ملبے نے دور دور تک علاقوں میں آگ کے پتھروں کی بارش برسائی، کچھ راکھ خلاء میں اڑ کر زمین کے گرد غلاف کی شکل میں پھیل گئی جس نے زمین پر سورج کی روشنی بلاک کردی… ٹکراؤ کے فوراً بعد زمین پہ 11 ریکٹر اسکیل کی شدت کا ہولناک زلزلہ آیا اور سونامی کی دیوہیکل لہریں اٹھ کر ساحلوں کی جانب بڑھیں یوں سونامی کی وجہ سے خشکی پہ موجود ایک بڑی آبادی کا خاتمہ ہوگیا… اس کے بعد اگلا مرحلہ زمین کی فضاء میں کھربوں ٹن زہریلی گیسوں کے اخراج کا تھا… سمندر میں شہابیہ جس مقام پہ ٹکرایا وہاں تیل اور معدنیات سے بھرپور ذخائر موجود تھے جس وجہ سے فضاء میں کھربوں ٹن سلفر، کاربن ڈائی آکسائیڈ، کاربن مونو آکسائیڈ اور میتھین پھیلنا شروع ہوگئیں، چونکہ یہ گیسز جانداروں کے لیے زہرِقاتل ہیں لہٰذا یہ کہنا مناسب ہوگا کہ یہ شہابیہ عین اسی مقام پہ ٹکرایا جہاں اسے ٹکرانا چاہیے تھا اگر کہیں اور ٹکراتا تو شاید اتنے بھیانک نتائج سامنے نہ آتے…. پینتالیس منٹ کے بعد گیسز کے اس طوفان نے پوری زمین کو اپنی لپیٹ میں لے لیا… ٹکراؤ سے دُور کے علاقوں یعنی ایشیاء، افریقہ، یورپ وغیرہ میں موجود جانداروں کی موت انہی زہریلی گیسز کی وجہ سے ہوئی… اڑنے والی راکھ نے ویسے ہی سورج کی کرنوں کی زمین کی سطح تک رسائی بند کردی تھی لہٰذا زمین تاریکی میں ڈوب گئی… پودے خوراک نہ بنا پائے اور مرنا شروع ہوگئے، سمندروں میں ایلجی کے ختم ہونے سے سمندری فوڈ چین بُری طرح متاثر ہوا… خشکی پہ 25 کلو سے زیادہ کا کوئی جاندار نہ بچ پایا، تقریباً تمام بڑے جانور ٹھنڈ، بھوک اور دَم گُھٹنے کے باعث مر گئے… صرف کیڑے مکوڑے، چھوٹے جاندار اور پرندے ہی بچ سکے کیونکہ کیڑے مکوڑے مَرے ہوئے پودے کھا کر… جبکہ چھوٹے جاندار اور پرندے اُن کیڑے مکوڑوں کو کھا کر زندہ رہے… سورج کی روشنی کے ساتھ گرمائش بھی رُک ہوچکی تھی لہٰذا زمین شدید ٹھنڈ کی لپیٹ میں آگئی، اس دوران کیڑے مکوڑوں اور چھوٹے جانداروں نے زیر زمین رہ کر جان بچائی… کافی عرصے بعد جب گرد کے بادل چھٹنا شروع ہوئے سورج کی کرنوں کو زمین سے ٹکرانے کا موقع ملا تو زہریلی گیسز کی وجہ سے پوری زمین پہ تیزاب کی بارش ہوئی، جس کے باعث پوری زمین پر زہریلے کیمیکل پھیل گئے… اس واقعے میں صرف ڈائناسارس ہی نہیں بلکہ زمین پہ بہت سی انواع کا خاتمہ ہوا، زندگی کے مستقبل کا رُخ ہی بدل گیا، ڈائناسارس کی جگہ میملز نے طاقتور مخلوق کی جگہ لے لی اور 6 کروڑ سال سے اب تک میملز نے “طاقتور مخلوق” کا خطاب اپنے سر سجایا ہوا ہے… اِس سے پہلے ڈائناسارس 16 کروڑ سال سے طاقتور مخلوق چلی آرہی تھی اور پورے روئے زمین اُسی کی حکمرانی تھی، جس کا مطلب یہ ہے کہ اگر یہ واقعہ نہ ہوتا یا یہ پتھر کسی اور مقام پر گر جاتا تو آج آپ اور میں یہاں نہ ہوتے بلکہ ڈائناسارس کی ہی بادشاہت چل رہی ہوتی… اس ہولناک واقعے میں زمین کی 75 فیصد مخلوق ہلاک ہوگئی تھی، زمین کی سلطنت کا تاج ڈائناسارس سے چھن کر میملز تک پہنچ گیا… یعنی 6 کروڑ سال قبل زمین پہ زندگی نے دوبارہ پنپنا شروع کیا… زمین پہ آج بھی شہابیے گرتے رہتے ہیں، جو عموماً چھوٹے سائز کے ہوتے ہیں، مگر اس واقعے سے معلوم ہوتا ہے کہ زندگی کے خاتمے کے لیے 12 کلومیٹر بڑا شہابیہ بھی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے..

Article Translated into Easy English

You must have heard that
on April 29, 2020, a stone will hit the earth, causing the world to collapse … The fact is that on April 29, a stone will pass through the orbit of the earth, but it will be 60 from the earth. Millions of kilometers away, which will keep us safe … But in the past, such giant rocks have hit the earth repeatedly, and the last time this event happened was 6 million years ago … when such a rock catastrophe from heaven. Revealed, which almost destroyed life on the planet Earth, the wounds of the incident are still etched on the chest of the earth … It was such a traumatic event that, for serious reason, We have to shake the window of the past six and a half million years and imagine that as we are there … we have entered into this covenant by crossing the threshold of 6 million years past, called Mesozoic Era. Well, this is the last day of the Mesozoic Era, we see other animals, including dinosaurs moving around us … everything was running in a very calm way, but then suddenly a star appeared in the sky, The sun was shining several times faster than the light of day … This strange star appeared to be moving towards the earth after a while … Little did he know that this shining star was actually snatching life’s colors from the Earth … It was a rock 12 km wide, moving towards the Earth at a speed of about one million kilometers per hour … Investigation today The rock is reported to have fallen to a marine location in North America, where today the village of Chicxulub, Mexico … One billion times more intense than the atom bomb, this collision changed the course of life on Earth. Put on … its collision caused such intense shockwave and heat that in the next seconds hundreds of kilometers in the vicinity of everything was piled ashore. Gone …. The wreckage from this collision rained fiery rocks in the distant areas, some ash flew into the space in the form of a cover around the earth, which blocked the sunlight on the ground .. Immediately after the collision, a devastating earthquake of magnitude 11 on the Richter Scale occurred and the tsunami waves lifted to the shoreline. There was trillions of poisonous gases emitted into the atmosphere of … At the place where the Shahabiya collided in the sea, there was abundant oil and mineral deposits that caused the air Rabbit tin sulfur, carbon dioxide, carbon monoxide and methane began to spread, since these gases are poisonous to living beings, so it would be fair to say that this shahabiya collided at the exact spot where it should collide, if possible. Fierce results were not revealed …. After forty-five minutes this storm of gases engulfed the entire earth … The death of animals in far-flung areas, Asia, Africa, Europe, etc., caused the poisonous gases. Due to the … flying ash had blocked the sun’s rays from reaching the earth’s surface so the Earth Reiki drowned … Plants failed to make food and began to die; Seagrass food chain was badly affected by the extinction of algae in the oceans … No more than 25 kilos of living organisms survived, almost all large The animals died of frostbite, hunger and suffocation … Only insects, small animals and birds survived because insects ate dead plants … while small animals and birds survived by eating these insects. The heat was stopped with sunlight, so the earth was covered by severe frost, while insects and small animals survived underground. Not long after the surrounding clouds began to collapse, the rays of the sun hit the earth, causing toxic gases to cause acid rain on the entire earth, causing toxic chemicals to spread all over the earth … Not only dinosaurs but many species on earth were eliminated, the future of life changed, mammals replaced powerful creatures, and mammals have been addressing “powerful beings” for over 600 million years. The head is decorated … Before that dinosaurs were powerful creatures for 16 million years and the whole earth was ruled by him, which means that if Had the incident not happened or if the stone had fallen somewhere else, you and I would not have been here today, but the kingdom of the dinosaurs was still running … In this horrific event, 75% of the earth’s creatures were killed, the crown dinosaurs of the Earth Empire. By the time it reached the memes … that is, 6 million years ago, life on earth began to flourish again. On earth, still honeybees, which are usually small in size, are known but Even a 12-kilometer large martyr could prove dangerous for life …

Tags: 
earth, asteroid hit earth, asteroid to hit earth, asteroid hitting earth, asteroid earth, how asteroids hit the earth, what if an asteroid hit the earth, near earth objects, near earth asteroid, will an asteroid hit earth in 2019, asteroids hitting earth, will this asteroid hit earth in 2020?, when is the next asteroid predicted to hit the earth, will an asteroid hit earth in my lifetime, 29 april 2020, asteroid 29 april 2020, 29 april 2020 nasa, asteroid april 2020, asteroid 2020, 29 april 2020 ko kya hone wala hai, 29th april 2020, april 29 2020, april 2020, april 29, asteroid live stream 2020, 29 april 2020 nasa asteroid, 29 april, will a huge asteroid hit earth in april 2020, 29 april 2020 ko kya hoga, what will happen on 29 april 2020, what will happened at 29 april 2020, 29 april 2020, 29 april 2020 nasa,asteroid 2020, 29 اپریل 2020 کو دنیا ختم ہو گی؟ ,29 aapril 2020, 29 april 2020 world end, 29 april 2020 asteroid, asteroid 29 april 2020, 29 april 2020 nasa asteroid, 29 april 2020 ko kya hone wala hai, on 29 april 2020 the world will end?, asteriod will hit earth on 29 april 2020, on 29 april 2020 asteriod will hit earth, nasa, asteroid, asteroids, nasa asteroids, asteroid news, asteroid threat, asteroid impact, asteroid 2020, asteroid hit earth, asteroid hitting earth, nasa asteroid news today, nasa asteroid, nasa asteroid plan, asteroids hitting earth, near earth asteroids, asteroid redirect mission, nasa jpl asteroids, double asteroid redirection test, nasa asteroid mission, nasa multiple asteroids, science, space, nasa mission, asteroid day, asteroid russia,

admin

Read Previous

عثمان سے شادی کے بعد کیا ہوا ۔ سچا واقعہ

Read Next

حضرت محمد ﷺ کی رضاعی بہن سیدہ شیؓما کا واقعہ جو آپﷺ کو لوریاں دیتی تھیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *