Ek Main Hi Nahi Un Par Qurban Zamana Hai Naat

Ek main hi nahi un par qurban zamana hai,
Ik main hi nahin un per qurban zamana hai,

Jo Rab e do aalam ka mahboob yagana hai.
Kal pul say hamein jis nay khud par lagana hai,
Zahra ka woh baba hai Hasnain ka nana hai.

Iss hashmi dulha per konain ko main waroon,
Jo husn o shumail mein yakta e zamana hai.

Izzat say na marjayein kyun naam e Muhammad par,
Youn bhi kisi din hum ne duniya say toh jana hai.

Yoon Shah e Madina ki mein pusht panahi mein,
Kiya iski mujhe parwah dushman jo zamana hai.

Soh bar agar tauba tuti bhi to kiya hairat,
Bakhshih ki riwayat mein toba to bahana hai.

Mehroom e karam is ko rakhiye na sar e mehshar,
Jaisa hai Naseer aakhir, sahil toh purana hai.

Pur Noor si rahein hain, gunbad pay nigahein hai,
Jalwey bhi anokhay hain, manzar bhi suhana hai.

Yeh keh kay dar e haq say li maut mein kuch mohlat,
Milad ki aamad hai mehfil ko sajana hai.

Aao dar e Zahra par phalaye hue daman,
Yeh nasal kareemon ki lajpal gharana hai.

Qurban us aaqa per kal hashr ke din jisnay,
Iss ummat e aasi ko kamli mein chupana hai.

Har waqt woh hain meri duniya e tasawar mein,
Aie shoq kahin ab to aana hai na jana hai.

Hum kyun na kahein unsay rodad e alam apni,
Jab unka kaha khud bhi Allah nay mana hai.

اک میں ہی نہیں ان پر قربان زمانہ ہے
جو رب دو عالم کا محبوب یگانہ ہے

کل جس نے ہمیں پُل سے خود پار لگانا ہے
زہرہ کا وہ بابا ہے سبطین کا نانا ہے

اُس ہاشمی دولہا پر کونین کو میں واروں
جو حُسن و شمائل میں یکتائے زمانہ ہے

عزت سے نہ مر جائیں کیوں نام محمد پر
ہم نے کسی دن یوں بھی دنیا سے تو جانا ہے

آو در زہرہ پر پھیلائے ہوئے دامن
ہے نسل کریموں کی لجپال گھرانہ ہے

ہوں شاہ مدینہ کی میں پشت پناہی میں
کیا اس کی مجھے پرواہ دشمن جو زمانہ ہے

یہ کہ کے در حق سے لی موت میں کچھ مہلت
میلاد کی آمد ہے محفل کو سجانا ہے

قربان اُس آقا پر کل حشر کے دن جس نے
اَس اُمت عاصی کو کملی میں چھپانا ہے

سو بار اگر توبہ ٹوٹی بھی تو حیرت کیا
بخشش کی روائت میں توبہ تو بہانہ ہے

پُر نور سی راہیں ہیں گنبد پہ نگاہیں ہیں
جلوے بھی انوکھے ہیں منظر بھی سہانا ہے

ہم کیوں نہ کہیں اُن سے رُو داد الم اپنی
جب اُن کا کہا خود بھی اللہ نے مانا ہے

محروم کرم اَس کو رکھیئے نہ سرِ محشر
جیسا ہے نصیر آخر سائل تو پُرانا ہے

پرُنور سی راہیں ہیں گنبد پہ نگاہیں ہیں
جلوے بھی انوکھے ہیں منظر بھی سہانا ہے

یہ کہہ کے درِ حق سے لی موت میں کچھ مہلت
میلاد کی آمد ہے محفل کو سجانا ہے

آؤ در ِ زہرہ پر پھیلائے ہوئے دامن
ہے نسل کریموں کی لجپال گھرانہ ہے

قربان اس آقا پر کل حشر کے دن جس نے
اس امت ِ عاصی کو کملی میں چھپانا ہے

ہر وقت وہ ہیں میری دنیائے تصور میں
اے شوق کہیں اب تو آنا ہے نہ جانا ہے

ہم کیوں نہ کہیں ان سے روداد ِ الم اپنی
جب ان کا کہا خود بھی اللہ نے مانا ہے

Free Download Ek Main Hi Nahi Un Par Qurban Zamana Hai Naat Nasheed Lyrics in Urdu Hindi and English Version. Watch yourself Like & Share with others. Jazak Allah Khair

admin

Read Previous

Unki Mahek Ne Dil Ke Ghunche Khila Diye Hain Naat Lyrics

Read Next

Ab Tangi E Daman Pe Na Ja Aur Bhi Kuch Mang Urdu Naat Lyrics

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *